مجاہدین کو عوام کی حمایت حاصل ہے، کشمیر میں جنگ ہار رہے ہیں: بھارتی کمانڈر ، آئی جی آپریشنز کا اعتراف

cnnpointسرینگر (صبا ح نیوز) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج ، پولیس اور سی آر پی ایف نے پہلی بار اعتراف کیا ہے کہ وہ آپریشن سدبھاﺅنا پر کروڑوں روپے خرچ کرنے کے باوجود کشمیریوں کے ذہنوں اور دلوں کو جیتنے میں ناکام ہوئے ہیں۔ بھارتی فوج کی شمالی کمان میں سولہویں کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل ڈی ایس ہوڈا نے امریکی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج آپریشن سدبھاﺅنا پر کروڑوں روپے خرچ کرنے کے باوجودکشمیریوں کے دلوں اور ذہنوں کو جیتے میں ناکام ہوئی۔ انہوںنے کہا کہ وہ مجاہدین کے خلاف آپریشن کے دوران مطمئن نہیں ہوتے ہیں کیونکہ مجاہدین کی حمایت میں لوگوں کے ہجوم کا جمع ہونا ان کے لیے پریشانی کا باعث ہوتا ہے۔ انہوں نے کہافوجی اہلکاروں کو مجاہدین کے خلاف لڑتے ہوئے عوام کی طرف سے ہمدردی کی کوئی امید نہیں ہوتی ہے۔ ڈی ایس ہوڈا نے کہا کہ مجاہدین کی بڑھتی ہوئی حمایت سے نہ فوج کی انٹیلی جنس کی صلاحیت متاثر ہوئی اور آپریشنل صلاحیت پر بھی فرق پڑا ہے کیونکہ لوگ جاری جھڑپوں کے دوران بھی مجاہدین کو بچانے کی کوشش کے طور پر مداخلت کرتے ہیں۔جنرل ہوڈا کے اعتراف کی تصدیق بھارتی پیرا ملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس (CRPF) کے آفیسر نے بھی کی ہے۔ سی آر پی ایف کے انسپکٹر جنرل آپریشنز نلین پریبھات نے کہا کہ عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن کے دوران امن وامان کو بحال رکھنا آپریشن سے بھی زیادہ اہم بن گیا ہے اور یہ ہمارے لئے شدید تشویش کا باعث ہے۔ ایک سینئر پولیس افسرنے میڈیا انٹرویو میں کہا کہ جنوبی کشمیر ایک آزاد علاقہ لگتا ہے اور میں مذاق نہیں کررہا ہوں۔مجاہدین حملہ کرکے اپنی مرضی سے نکل جاتے ہیں اور ہم تماشا دیکھنے کے سوا کچھ نہیں کرسکتے۔انہوں نے کہا مجاہدین ایسا صرف اس لیے کرسکتے ہیں کیونکہ انہیں پتہ ہے کہ ان کو عوامی حمایت حاصل ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس اہلکار 2010ءکے بعد پہلی بار حملے سے بچنے کے لیے اپنی شناخت اور پیشہ چھپاتے ہیں۔

Editor
Editor
Web Administrator at CNN POINT Admin is the Web Administrator of CNN Point, Admin is the Official Author of CNN Point