نائٹ میں 5 روز تک فائٹ؛ ویسٹ انڈیز نے ’’ہاں‘‘ کردی

cnn point لاہور: ویسٹ انڈیز نے نائٹ میں 5روز تک فائٹ کیلیے ’’ہاں‘‘ کر دی، اکتوبر میں شیڈول میچ سے پاکستان کو آسٹریلیا کیخلاف نائٹ ٹیسٹ کی تیاریوں میں خاصی مدد ملے گی۔
یہ انکشاف چیئرمین پی سی بی شہریارخان نے کیا ان کے مطابق انگلینڈ بھی محمد عامر کو شرف قبولیت بخشنے کیلیے تیار ہے،ویزا جاری کرنے کے حوالے سے مثبت جواب مل گیا، البتہ سلمان بٹ اور محمد آصف کے حوالے سے تحفظات کا اظہار کیا گیا ہے، ٹیم کیلیے منتخب ہونے کی صورت میں سفری دستاویزات کا معاملہ دیکھیں گے، چیئرمین کا کہنا ہے کہ ہیڈکوچ اور کرکٹ کمیٹی کیلیے ناموں کا اعلان2،3روز میں ہوگا،امیدواروں کی فہرست گورننگ بورڈاجلاس میں پیش کرینگے،ان کے مطابق یونس خان نے غلطی تسلیم کرلی اس لیے معاف کردیا، عمر اکمل اور احمد شہزاد کے واقعات سنگین نوعیت کے نہیں تھے، پی ایس ایل میں چھٹی ٹیم کے اضافے سے کسی فرنچائز کے مالک کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔
تفصیلات کے مطابق پاکستان کو دسمبر میں آسٹریلیا سے برسبین میں نائٹ ٹیسٹ کھیلنا ہے، اس کی تیاریوں کیلیے ویسٹ انڈیز سے اکتوبر کی سیریز میں اس طرز کا ایک میچ کھیلنے کی درخواست کی گئی تھی، چیئرمین شہریارخان نے گذشتہ روز قذافی اسٹیڈیم لاہور میں میڈیا کو بتایا کہ ہماری تجویز پر کیریبیئن بورڈ نے ہاں میں جواب دے دیا ہے،اس تاریخی موقع کیلیے بھرپور تیاری کریںگے۔ انھوں نے کہا کہ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث تینوں کھلاڑیوں کیلیے ویزے کے حصول میں چند رکاوٹیں ہیں، انگلینڈ نے محمد عامر کو ویزا جاری کرنے کیلیے مثبت جواب دیا، البتہ سلمان بٹ اور محمد آصف کے حوالے سے تحفظات کا اظہار کیا گیا ہے تاہم ان کا ٹیم کیلیے انتخاب ہوا تو ویزے کا معاملہ دیکھ لیںگے۔
یاد رہے کہ قومی ٹیم کے دورئہ انگلینڈ 2010 کے دوران اسپاٹ فکسنگ میں ملوث ہونے پرکپتان سلمان بٹ، پیسرز محمد آصف اور محمد عامر پر 5 سال کی پابندی عائد کی گئی تھی،تینوں کو جیل کی ہوا بھی کھانا پڑی،سزا کی مدت گذشتہ سال مکمل ہونے پر پہلے محمد عامر بعد ازاں دیگر دونوں کرکٹرز کو ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے کی اجازت دیدی گئی، پیسر کو گذشتہ سال دورہ نیوزی لینڈ کیلیے قومی ٹیم میں شامل کیا گیا تھا، بعد ازاں وہ ایشیا کپ اور ورلڈ ٹوئنٹی20میں بھی شریک ہوئے، سلمان بٹ نے واپڈا کی نمائندگی کرتے ہوئے قومی ون ڈے کپ اور فیصل آباد میں جاری پاکستان کپ میں پنجاب کی جانب سے بہترکارکردگی کا مظاہرہ کیا، وہ قومی ٹیم میں شمولیت کے مضبوط امیدوار بھی سمجھے جارہے ہیں۔
پاکستانی اسکواڈ کو رواں سال جولائی میں 4 ٹیسٹ، 5 ون ڈے اور ایک ٹوئنٹی20 میچ پر مشتمل سیریز کیلیے انگلینڈ کا دورہ کرنا ہے جس کیلیے ان سزا یافتہ کھلاڑیوں کو ویزامسائل درپیش آسکتے ہیں۔ شہریارخان نے کہا کہ ہیڈکوچ اور کرکٹ کمیٹی کیلیے ناموں کا اعلان 2،3 روز میں ہوگا،امیدواروں کی فہرست گورننگ بورڈاجلاس میں پیش کرینگے، ملکی اور غیر ملکی امیدواروں کے نام گورننگ بورڈ میٹنگ میں پیش کیے جائیں گے، ارکان کی منظوری کے بعد اعلان کردیا جائے گا۔
ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ یونس خان بڑے کھلاڑی ہیں، جب معافی مانگ لی تو اسے تسلیم کرکے پاکستان کپ ٹورنامنٹ میں شرکت کی اجازت دیدی، عمر اکمل اور احمد شہزاد کا واقعات سنگین نوعیت کے نہیں تھے تاہم ان کا جائزہ لے رہے ہیں، مکمل چھان بین کی جائے گی۔شہریارخان نے کہا کہ پاکستان سپر لیگ میں اگر 5 کے بجائے 6 فرنچائز بھی ہوجائیں تو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا، ایونٹ میں جتنی ٹیمیں شامل ہوں بہتر ہوگا، میں اور نجم سیٹھی اس معاملے پر غور کریں گے، چھٹی ٹیم کے اضافے سے کسی فرنچائز مالک کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔

Editor
Editor
Web Administrator at CNN POINT Admin is the Web Administrator of CNN Point, Admin is the Official Author of CNN Point